ریلوے کا کروڑوں روپے کا کوئلہ چوری ، کون ملوث نکلا؟

لاہور(ویب ڈیسک) لاہور میں ریلوے پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے کروڑوں روپے کا کوئلہ چوری کرنے والے ریلوے ملازمین سمیت 13افراد کو گرفتار کر لیا۔ ایکسپریس ٹربیون کے مطابق ملزمان نے بیرون ممالک سے درآمد کیے گئے کوئلے کی بوگیاں لوٹی تھی۔ گرفتار افراد میں سٹیشن ماسٹر مشتاق اور اسسٹنٹ سٹیشن ماسٹر سلمان بھی شامل ہیں۔

آئی جی ریلوے پولیس فیصل شاہکار نے بتایا کہ ”ریلوے کے ملازمین کی ملی بھگت سے درآمد شدہ کوئلے کی بوگیاں لوٹی جاتی تھیں۔ کوئلہ فریٹ ٹرین کا گارڈ عرفان اور ٹرین کا ڈرائیور مطلوب حسین بھی ان وارداتوں میں ملوث رہے۔ کوئلہ چوری کرنے والوں میں کامران، رانا ریاض و دیگر ملزمان شامل ہیں۔ آئی جی ریلوے پولیس کا کہنا تھا کہ ”جب بھی کوئلہ بندرگاہ سے یوسف والا، ساہیوال کے لیے روانہ کیا جاتا تھا، فریٹ ٹرین پر ریلوے کے اسی عملے کے ہی ڈیوٹی لگائی جاتی تھی۔ یہ لوگ ٹریک کے نیچے سے گزرنے والے ایک خشک پل کے اوپر صرف 10منٹ کے لیے ٹرین روکتے اور دو بوگیوں کے پلڑے کھول کر کوئلہ نیچے خشک جگہ پر گرا دیتے۔“ فیصل شاہکار کا کہنا تھا کہ” وہاں سے دیگر ملزمان کوئلہ اٹھا کر پرائیویٹ گاڑیوں کے ذریعے لے جاتے اور فروخت کر دیتے تھے۔ اس طریقے سے ملزمان نے حالیہ کچھ عرصے میں کروڑوں روپے مالیت کا کوئلہ چوری کیا۔ گرفتار ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے اور کیس میں مزید تحقیقات کی جا رہی ہیں۔“

Leave a Reply

Your email address will not be published.