شہباز شریف کی ضمانت منسوخ کرنے کیلئے دائر ’حکومتی درخواست‘ پر تہلکہ خیز فیصلہ آگیا

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)لاہور کی عدالت نے شہباز شریف کی ضمانت منسوخی کی درخواست کو خارج کردیا۔نجی ٹی وی کے مطابق لاہورکی اسپیشل کورٹ سینٹرل نے ایف آئی اے کی جانب سے شہباز شریف کی ضمانت منسوخی کی درخواست پر سماعت کی۔دورانِ سماعت شہباز شریف کے وکیل امجد پرویز نے دلائل میں کہا کہ عدالت تصحیح تب کرتی ہے جب حکم قانون سےہٹ

کر ہو، سپریم کورٹ کی ہدایت ہےاراکین اسمبلی اجلاس میں ہوں تو عدالتیں اکاموڈیٹ کریں، فریال تالپور کے کیس میں بھی سپریم کورٹ کا یہ فیصلہ شامل کیا گیا ہے۔امجد پرویز نے کہا کہ کسی نے عدم اعتماد کے بعدوزارت قانون کا چارج لےلیا،جو اس کیس کو مانیٹر کر رہا ہے،کسی نے سیشن میں شرکت کرنا ہےتو اسے رعایت ملتی ہے۔شہباز شریف کے وکیل نے مؤقف اپنایا کہ ایک شخص کو خوش کرنےکیلئے ایف آئی اے نے ضمانت منسوخی کی درخواست دی۔عدالت نے شہباز شریف کے وکیل کے دلائل سننے کے بعد ایف آئی اے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کیا جو کچھ دیر بعد سناتے ہوئے لیگی رہنما کی ضمانت منسوخی کی درخواست کو خارج کردیا۔عدالت نے شہباز شریف کی آج کی حاضری معافی کی درخواست منظور کرلی جب کہ شریک ملزم کی جانب سے عدالتی دائرہ اختیار کی درخواست بھی خارج کردی۔عدالت نے شہباز شریف،حمزہ شہباز اور دیگر کو فرد جرم کے لیے 11 اپریل کو طلب کرلیا۔یاد رہےکہ حکومت نے تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ سے قبل شہباز شریف کو گرفتار کرانے کے ایف آئی اے کے ذریعے ان کی ضمانت منسوخی کی درخواست دائر کی تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.