حکمران اتحاد کا پی ٹی آئی کے ساتھ خفیہ رابطوں کا انکشاف۔۔۔ حکومتی ایوانوں میں ہلچل مچا دینے والی خبر

اسلام آباد (ویب ڈیسک) حکمران اتحاد کا تحریک انصاف کے ساتھ بیک ڈور رابطوں کا انکشاف ہوا ہے۔اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق حکمران اتحاد نے تحریک انصاف کے استعفے قبول نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔رپورٹ کے مطابق فلور پر کھڑے ہو کر استعفے دینے والوں کے استعفے بھی قبول نہیں

کیے جائیں گے۔ شاہ محمود قریشی، فواد چوہدری ، شیریں مزاری نے ایوان میں کھڑے ہو کر رکنیت چھوڑنے کا اعلان کیا تھا۔ پی ٹی آئی کی واپسی کی امید پر تینوں رہنماؤں کے استعفے قبول نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔3 رہنماؤں کے استعفے قبول ہوئے تو تحریک انصاف کی واپسی کو نقصان ہو گا۔قبل ازیں بتایا گیا کہ پاکستان تحریک انصاف نے فوری طور پر لانگ مارچ نہ کرنے اور اراکین اسمبلی کا استعفوں کی تصدیق کے لیے اسپیکر کے سامنے پیش نہ ہونے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ نجی ٹی وی کے مطابق یہ فیصلہ چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کی زیر صدارت بنی گالہ میں منعقدہ کور کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا۔ ذمہ دار ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم کی زیر صدارت منعقدہ کور کمیٹی کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ انتخابات کے علاوہ کسی اور آپشن پر مذاکرات نہیں ہوں گے، مہنگائی مارچ کا فیصلہ15 جون کے بعد کیا جائے گا۔ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ ہوا کہ بجٹ کی وجہ سے فوری طور پر لانگ مارچ نہیں کیا جائے گا، احتجاج ملک بھر میں ضلعی سطح پر ہوگا۔ ذرائع کے مطابق عمران خان کی زیر صدارت منعقدہ اجلاس میں سابق وزیراعطم کی گرفتاری کی صورت میں کیا حکمت عملی ہو گی؟ طے کر لی گئی۔واضح رہے کہ چیئرمین پی ٹی ٹی آئی پشاور میں 13 روز قیام کے بعد وفاقی دارا لحکومت اسلام آباد میں اپنی رہائش گاہ پہنچے ہیں۔ ان کے ہمراہ وزیراعلیٰ کے پی محمود خان بھی ہیں۔ مہنگائی مارچ کا فیصلہ15 جون کے بعد کیا جائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.