پی ٹی آئی کے دور حکومت میں جوانوں میں بیروزگاری کا تناسب بڑھا یا کم ہوا ؟خصوصی سروے کے نتائج

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی قیادت میں حکومت کے دوران بے روزگاری سے سب سے زیادہ کون متاثر ہوا؟ بہت سے لوگوں کو حیرت ہوگی کہ پاکستانی نوجوان، جو عمران خان سے عقیدت رکھتے تھے، نے سب سے زیادہ نقصان اٹھایا جیسا کہ نوجوانوں میں بے روزگاری

کا تناسب مجموعی بے روزگاری کی شرح سے تقریباً دوگنا تھا۔پاکستان کے اقتصادی سروے سے پتہ چلتا ہے کہ نوجوانوں میں بے روزگاری کا تناسب گزشتہ دور حکومت سے بھی زیادہ تھا۔ پاکستان کا اقتصادی سروے ظاہر کرتا ہے کہ نوجوانوں میں بے روزگاری کا پھیلاؤ ملک میں بیروزگاری کی مجموعی شرح سے کہیں زیادہ ہے۔دلچسپ بات یہ ہے کہ مالی سال 2021-22 کے دوران خیبرپختونخوا میں روزگار اور آبادی کا تناسب چاروں صوبوں میں سب سے کم ہے۔ لیبر فورس سروے 2020-21 کے مطابق مجموعی طور پر بے روزگاری کی شرح 6.3 فیصد ہے جس میں 20-24 سال کی عمر کے نوجوانوں میں بیروزگاری کی شرح 12.2 فیصد ہے جو کہ 2018-19 میں 11.8 فیصد تھی۔پاکستان کا اقتصادی سروے ظاہر کرتا ہے کہ نوجوانوں کی بے روزگاری کی شرح اوسط بے روزگاری کی شرح کے مقابلے کافی زیادہ ہے۔ لیبر فورس سروے 2020-21 ظاہر کرتا ہے کہ مجموعی طور پر روزگار اور آبادی کا تناسب 42.1 فیصد ہے اور یہ تناسب خواتین (19.4 فیصد) کے مقابلے مردوں میں (64.1 فیصد) زیادہ ہے۔ صوبے کے لحاظ سے موازنہ بھی اسی طرز کو ظاہر کرتا ہے۔پنجاب میں روزگار اور آبادی کا تناسب 44.2 فیصد ہے، اس کے بعد سندھ (42.1 فیصد)، بلوچستان (38.6 فیصد) اور کے پی میں (36 فیصد) ہیں۔ جی ڈی پی میں اہم شراکت دار ہونے کی وجہ سے زراعت کا شعبہ معیشت کی ترقی میں اہم کردار ادا کرتا ہے لیکن پی ٹی آئی کے دور حکومت میں زرعی شعبے میں روزگار میں بھی کمی آئی ہے۔لیبر فورس سروے 2020-21 کے مطابق زرعی شعبے میں روزگار کا حصہ 2018-19 میں 39.2 فیصد سے کم ہو کر 2020-21 میں 37.4 فیصد رہ گیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.