پٹواری کی تعیناتی کا معاملہ!! ن لیگ کے 2 ایم پی ایز آمنے سامنے، ایک دوسرے پر بڑے الزامات لگا دیئے

گوجرانوالہ: (ویب ڈیسک) گوجرانوالہ میں پٹواری کی تعیناتی کے معاملے پر مسلم لیگ ن کے 2 اراکین پنجاب اسمبلی آمنے سامنے آ گئے۔کھیالی شاہ پور سرکل میں ایک ماہ کے عرصے ایک ہی پٹواری کو تین بار لگایا اور ہٹایا گیا۔ ذرائع ضلعی انتظامیہ کا بتانا ہے کہ پٹواری کا معاملہ ڈپٹی کمشنر سے کمشنر اور پھر وزیراعلیٰ دفتر جا پہنچا۔ لیگی ایم پی اے نواز چوہان کا کہنا ہے کہ عمران خالد بٹ میرے حلقے میں مداخلت کر رہے ہیںٕٕ

جبکہ ایم پی اے عمران خالد بٹ کا کہنا ہے کہ پٹواری کا معاملہ ڈپٹی کمشنر، کمشنر اور وزیراعلیٰ دفتر کے نوٹس میں ہے، کسی سے جھگڑا نہیں ہے اور مجھ پر مداخلت کا الزام غلط ہے۔ ادھر پاکستان نے چین سے دو ارب ڈالر کے قرض کی واپسی کی مدت میں ایک بار پھر توسیع کی درخواست کردی۔نجی ٹی وی کے مطابق حکومت نے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں 4 ارب ڈالر کے چینی قرض اور کم از کم 3 ارب ڈالر کے آئی ایم ایف قرض کو شامل نہیں کیا۔ چین کے چار میں سے دو ارب ڈالر کے قرض کی واپسی کا وقت قریب آرہا ہے۔حکام کے مطابق وزیراعظم شہباز شریف نے باضابطہ طور پر چینی حکومت سے ایک ارب ڈالر کے دو قرضوں کی واپسی کی مدت میں توسیع کی درخواست کردی ہے تاہم وزارت خزانہ نے 4 ارب ڈالر مالیت کے ’’ سیف ڈپازٹ ‘‘ لون اور 3 ارب ڈالر کے آئی ایم ایف کے قرض کو ایکسٹرنل ری بیٹ میں شامل نہیں کیا۔ وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے گزشتہ روز تسلیم کیا تھا کہ آئی ایم ایف اور کچھ چینی قرض کا بجٹ میں شامل نہ ہونا ایک غلطی تھی جسے دور کرلیا جائے گا۔ یہ غلطی دور ہونے کے بعد مالی سال 2022-23ء کے لیے بیرونی معاونت ( بیرونی قرض) کا حجم ریکارڈ 24 ارب ڈالر تک پہنچ جائے گا۔ دوسری جانب سابق وزیراعظم اور چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا ہے کہ امپورٹڈ حکومت کی جانب سے قبائلی اضلاع کے لیے بجٹ میں کوئی اضافہ نہیں کیا گیا۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر سابق وزیراعظم عمران خان نے اپنے ٹویٹ میں لکھا کہ ہماری حکومت نے قبائلی اضلاع کی خصوصی ضروریات کے پیش نظر بجٹ میں تین گنا اضافہ کیا تھا لیکن موجودہ حکومت نے محض 110 ارب کا بجٹ رکھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.