عمران حکومت کے 12000 بُرے،شہبازحکومت کے 2000اچھےمگر کیسے؟ نجم سیٹھی کی ایسی ویڈیو وائرل کہ پاکستانیوں کے لیے یقین کرنا مشکل ہوگیا

لاہور(نیوز ڈیسک)نجم سیٹھی کا ایک کلپ وائرل ہورہا ہے جس میں وہ تحریک انصاف کے دور حکومت میں 12 ہزار روپے دینے کو تنقید کا نشانہ بناتے اور شہبازشریف دور میں 2 ہزار روپے دینے کی تعریف کررہے ہیں اور اسکے فضائل بیان کررہے ہیں۔اس کلپ کوبنانیوالے فل ٹاس نامی پیج کا کہنا تھا کہ جو صحافی خان حکومت کے 12

ہزار کی برائی کرے اور امپورٹڈ حکومت کے 2 ہزار کے فائدے گنوائے تو وہ صحافت نہیں منافقت کر رہا ہے۔جب تحریک انصاف حکومت نے کورونا وبا کے دوران احساس پروگرام کے تحت غریب افراد کو 12 ہزار روپے دئیے تو نجم سیٹھی نے اسے کڑی تنقید کا نشانہ بنایا اور ڈرامہ بازی قرار دیا تھا۔اس وقت نجم سیٹھی نے کہا تھا کہ یہ ایک سیاسی جماعت کی ایک سیاسی چال ہے، اس سے عوام کو کوئی فائدہ نہیں پہنچے گا۔ یہ ریلیف کسی کو ملنے والا نہیں۔شہبازشریف کی حکومت میں شہباز شریف نے پٹرول کی قیمتوں میں 60 روپے فی لیٹر اضافہ کرکے 2000 روپے دینے کا اعلان کیا تو نجم سیٹھی نے اسکی تعریفوں کے پل باندھ دئیے۔نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ یہ بہت اچھا اقدام کیا ہے، جن کے پاس موٹرسائیکلیں ہیں انکی زندگی میں آسانی ہوگی اور یہ بہت زبردست ماڈل ہے جسے دنیا بھر میں فالو کیا جارہا ہے۔اسفندیار نامی صحافی نے یہ کلپ شئیر کرتے ہوئے تبصرہ کیا کہ سرکاری اشتہارات کی طاقت ملاحظہ فرمائیے۔عدیل راجہ نے نجم سیٹھی کو منافق اور جھوٹا قرار دیا۔دوسری جانب نجی چینل جیو نیوز کے پروگرام رپورٹ کارڈ میں گفتگو کرتے ہوئے ارشاد بھٹی کا کہنا تھا کہ عمران خان تیرا شکریہ کہ تو نے جان سے مارنے والے اور جان لینے والے دنوں کی ہی دوستی کروا دی آمریت جمہوریت کی دوستی کروا دی اصلی شہید،نقلی شہید کی دوستی کروا دی۔پیپلزپارٹی، ن لیگ پر طنز کے تیر چلاتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ ضیاء الحق کےاصل بیٹےاور مودی کے یار کی دوستی کروا دی سیکیورٹی رسک اور گریٹر پنجاب بنانے والےجاتی امرا کے مجیب

الرحمان کی دوستی کروا دی۔ارشاد بھٹی کا مزید کہناتھا کہ عمران خان کے شکر گزار ہیں کہ انہوں نے عوام کا پیسہ لوٹ کر اربوں کی جائیداد بنانے والوں اور عوام کے خلاف اقدامات کرنے والوں کو عوام کے سامنے عیاں کر دیا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ جو ماضی میں ایک دوسرے پر تنقید کے نشتر چلا کر عوام کو بیوقوف بناتے رہے وہ تمام عناصر اب دن بدن عمران خان کی وجہ سے سامنے آرہے ہیں ۔ جب تک عمران خان موجود ہے یہ ہر چوتھے دن ایکسپوز ہوتے رہیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ یہ مفادات کی دوستی ہے، یہ لین دین کی دوستی ہے۔ یہ چیچوں چیچ گنڈیریاں، دو تیریاں دو میریاں کی دوستی ہے۔یہ مشترکہ دشمن کے خلاف اتحادی دوستی ہے۔ یہ ملکر موجیں کرنیوالے کی دوستی ہے۔ارشادبھٹی نے کہا کہ یہ جمہوریت کے اتنے بڑے چمپئین ہیں کہ انہوں نے لوٹوں کویقین دلایا کہ ہم آپکے مستقبل کی گاڑنٹی لیتے ہیں۔ یہ ووٹ کو عزت دینے والے کہتے ہیں کہ عمران خان کے پیٹ میں چھرا گھونپو۔واضح رہے کہ ماضی میں پیپلزپارٹی اور ن لیگ ایک دوسرے کے بدترین مخالف تھے، شہباز شریف ماضی میں علی زرداری کو لاڑکانہ اور کراچی کی سڑکوں پر گھسیٹنے کے بیانات دیتے رہے جبکہ آصف زرداری نوازشریف پر شیخ مجیب الرحمان بننے اور گریٹر پنجاب بنانے کے الزامات عائد کرتے تھے۔ماضی میں ن لیگ اور پیپلز پارٹی ایک دوسرے پر تنقید کے تیر برساتے رہے ہیں 2018 کے الیکشن میں مریم نواز نے عمران زرداری بھائی بھائی کا نعرہ لگائے اور کہا کہ آپ جو ووٹ پی ٹی آئی کو ڈالیں گے وہ زرداری کوجائے گا اور جو ووٹ تیر کو دیے گا اس کا ووٹ تحریک انصاف کو جائے گا کیونکہ یہ دونوں جماعتیں ایک ہیں اور ملی ہوئی ہے۔سابق وزیراعظم عمرا ن خان نے تواتر سے ن لیگ اور پیپلز پارٹی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہتے رہے کہ یہ سب چور ہیں اور جب ان پر ہاتھ ڈالا جائے گا تو یہ ایک ہو جائیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.