کس خطہ ارضی پر درخت ہیں، پانی کہاں ہے اور فصلیں کہاں موجود ہیں؟یہ سب جاننا ہوا اب بے حد آسان کیونکہ ڈائنامِک ورلڈ نے نیا ڈیٹ سیٹ پیش کر دیا

سان فرانسسكو(ویب ڈیسک) گوگل نے ڈائنامِک ورلڈ کے نام سے ایک نیا ڈیٹا سیٹ پیش کیا ہے جس کے تحت حقیقی وقت (ریئل ٹائم) میں ارضی تبدیلیوں یا کیفیات کو دیکھا جاسکتا ہے۔اس ٹول میں ڈیپ لرننگ، مشین لرننگ اور سیٹلائٹ سے حاصل شدہ اعلیٰ تفصیلی تصاویر کو شامل کیا گیا۔ جس سے انکشاف ہوتا ہے کہ کس خطہ ارضی پر درخت ہیں

پانی کہاں ہے اور فصلیں کہاں موجود ہیں؟گوگل میپس پر اصل ڈیٹا اور نقشے کے درمیان خاصا فرق ہوتا ہے کیونکہ تصاویر چھ ماہ بھی پرانی ہوسکتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ شہر کو انسان کی جانب سے تبدیل شدہ خطہ اراضی قرار دیا جاتا ہے حالانکہ وہاں پارک اور بڑے شہری جنگل ہوسکتے ہیں۔گوگل نے کہا ہے کہ ڈائنامک ورلڈ کے تحت اب ہر 1100 مربع فٹ اراضی کی درجہ بندی کی جائے گی۔ پھر نو مختلف اقسام کے تحت اسے بیان کیا جائے گا جن میں پانی، سیلابی سبزہ، تعمیراتی یا شہری حصہ، فصل، کھلا میدان، گھاس پھوس، یا برفیلے خطے یا برفیلے علاقے میں تقسیم کیا جائے گا۔ڈائنامک ورلڈ کے تحت روزانہ 5000 تصاویر تیار کی جائیں گی اور اسے مسلسل اپ ڈیٹ کیا جائے گا۔ اس طرح سائنسداں اور منصوبہ ساز جان سکیں گے کہ کس علاقے میں کس قسم کی سرگرمی جاری ہے۔ اس سے سیلاب، طوفان، جنگلات کی آگ اور سبزے میں کمی کو بھی نوٹ کیا جائے گا

Leave a Reply

Your email address will not be published.