وزیراعظم عمران خان کا برملا اعتراف

اسلام آباد(ویب ڈیسک)وزیراعظم عمران خان کاکہناہے کہ بدعنوانی اور چوری کیخلاف قوم لڑتی ہے،بدعنوانی کیخلاف عدلیہ نے لڑنا ہوتاہے، عدلیہ اگر ساتھ نہیں دے گی توہم چوری اور لوٹ مار کیخلاف نہیں لڑسکتے ،نوازشریف سے 7 ارب کا شیورٹی بانڈلیناچاہتے تھے،لیکن عدلیہ نے باہر بھیج دیا۔وزیراعظم عمران خان نے ٹیلی فون پر عوام سے بات چیت

کرتے ہوئے کہاکہ بدعنوانی ایسا مرض ہے جو صرف پاکستان میں نہیں پھیلا،ان کاکہناتھا کہ ایک حکمران کی چوری ملک کو تباہ کر دیتی ہے ، اقتدار میں آﺅپیسہچوریکرو،یہسارےغریب ممالک کی کہانی ہے،انکا کہنا تھا کہ اربوں روپے چوری اور حوالہ ہنڈی کے ذریعے ملک سے باہر بھیجی جاتی ہے،وزیراعظم چوری شروع کرتا ہے تو اس وقت ملک کی اصل تباہی ہوتی ہے۔وزیراعظم پاکستان نے کہاکہ کمپنیزکے نام پر ٹیکس کا پیسہ چھپایا جاتا ہے،غریب ممالک کے 7 ہزار ارب ڈالر باہر پڑے ہوئے ہیں،ہزاروں ارب ڈالر غریب ممالک سے باہر جاتے ہیں تووہاں خوشحالی آجاتی ہے،بدعنوان لوگ ملک سے باہر پیسے بھیجتے ہیں اور بڑے بڑے محلات بناتے ہیں ،یہاں بڑے بڑے بدعنوان لوگوں کو شادیوں پر وی آئی پیز کی طرح بلایاجاتا ہے،بدعنوان لوگ قید سے باہر نکلتے ہیں تو ان پر پھول پھینکے جاتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ قانون کی بالادستی کی لڑائی لڑی جارہی ہے،عمران خان کاکیاقصور کہ این آر او نہیں دے رہا،ہمیشہ ان لوگوں کیلئے ایک قانون اور عام آدمی کیلئے دوسراقانون ہے ،جو چیزیں مہنگی ہورہی ہیں یہ تو ایک بیماری کی علامات ہیں ،اصل چیز تو قانون کی حکمرانی ہے، پاکستان میں جو لڑائی چل رہی ہے یہ قانون کی بالادستی کی لڑائی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ روز بدعنوانی کی بات کریں تو لوگ تنگ آجاتے ہیں کوئی پکڑا نہیں جاتا ، بدعنوان لوگوں کو برا نہیں سمجھیں گے توبدعنوانی اور چوری کو نہیں روکا جاسکتا،جو طاقتور چوری کرتا ہے تو اس کی چوری اربوں میں جاتی ہے،آج تک ان کو کیوں کوئی ہاتھ نہیں لگا سکاکیونکہ یہ طاقتور ہیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.