موصوف کا کچا چٹھا کھل کر سامنے آگیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور شہباز گل نے کہا ہے کہ این اے 249 انتخابات کا نتیجہ جمہوریت کیلئے افسوسناک ہے، قوم الیکشن میں کراچی انتخابات کی طرح چور بازاری کی متحمل نہیں ہو سکتی،بشیر میمن جانتے تھے انکی جعلی گھی کمپنی اور ٹیکس چوری پر ہاتھ ڈالا جائیگا،

بشیر میمن بتائیں وزیراعظم نے جو ان سے کہا اس کے ثبوت ہیں؟بشیر میمن کو جعلسازی کا جواب دینا ہو گا, جمعہ کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مختلف سیاسی جماعتوں نے کورونا کے باعث کراچی میں انتخابات ملتوی کرنے کی درخواست کی تھی، الیکشن کمیشن نے اپنے اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے کراچی میں ورکنگ ڈے میں انتخابات کرائے، 9.6 فیصد ووٹ پڑے ہیں، 10 فیصد سے کم ووٹ پڑنے پر الیکشن کالعدم ہو جاتا ہے، سب جماعتیں انتخابات میں التوا چاہتی تھیں لیکن الیکشن کمیشن کو انتخابات کرانے کی کیا جلدی تھی، تمام جماعتیں انتخابات کو دھاندلی زدہ قرار دے رہی ہیں۔ وزیراعظم عمران خان انتخابات میں شفافیت کیلئے الیکٹرانک ووٹنگ کے خواہاں ہیں لیکن احسن اقبال جیسے لوگ اس پر غیر ضروری تنقید کرتے ہیں، تمام اختلاف بالائے طاق رکھ کر جمہوریت کی مضبوطی کیلئے انتخابی اصلاحات کرنی چاہئیں لیکن اس کی قیمت این آر او نہیں ہونی چاہئے،انہوں نے کہا کہ ایک نجی کمپنی نے 21 فروری کو میڈیا کے ایک حصہ میں اشتہار دیا کہ ہمارا نام جعلی طریقہ سے استعمال کرکے کاروبار کو نقصان پہنچایا جا رہا ہے، اس کمپنی کو 1997 میں لائسنس ملا تھا، یہ نجی کمپنی کوکنگ آئل اور گھی کا روبار کرتی ہے، اس نجی کمپنی نے متعدد بار اشتہارات دیئے کہ ان کا ٹریڈ مارک جعلی طریقہ سے استعمال کیا جا رہا ہے، اس کمپنی کو 2005 میں آئی ایس او سرٹیفکیٹ بھی مل چکا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.