مریم نواز کو ذمہ دار قرار دے دیا گیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) تحریک انصاف کی رہنما گزشتہ دنوں قومی اسمبلی اجلاس میں شریک تھیں کہ اس دوران اپوزیشن اور حکومتی اراکین کے درمیان لڑائی ہو گئی۔ دونوں جانب سے ایک دوسرے پر بجٹ کی کاپیاں پھینکی گئیں، ان میں سے ایک ملیکہ بخاری کی آنکھ میں لگی جس سے وہ زخمی ہو گئیں۔

اس معاملے پر بات کرتے ہوئے وزیر مملکت برائے اطلاعات فرخ حبیب نے بتایا ہے کہ ملیکہ بخاری کو ٹارگٹ کرکے بجٹ بک پھینکی گئی۔ ڈاکٹرز کے مطابق ان کی بائیں آنکھ کا کارنیا متاثر ہوا ہے، ان کی آنکھ ضائع ہونے کا خدشہ ہے۔فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ یہ کیسے لوگ ہیں جو قیادت سمیت ایسے واقعات کو پروان چڑھا رہے ہیں۔ ن لیگ نے کل پارلیمنٹ کو اکھاڑہ بنایا، ایوان میں جو زبان استعمال کی گئی ہماری ایسی تربیت ہی نہیں ہے۔ مریم نواز کو چچا کی تقریر پسند نہیں تھی تو گروپ باہر چلا جاتا۔انہوں نے الزام عائد کیا کہ مریم نواز کے کہنے پر ان کے گروپ نے ہلڑ بازی کی اور اپوزیشن لیڈر کی تقریر کو متاثر کیا گیا۔وزیر مملکت نے کہا کہ اپوزیشن کی قانون سازی میں کوئی دلچسپی نہیں، حکومت قانون سازی کرتی ہے تو اپوزیشن مگرمچھ کے آنسو بہاتی ہے۔ قومی اسمبلی سے 110 بل منظور ہو چکے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ن لیگ کی تاریخ ہے، قوم ابھی ماڈل ٹاؤن کا سانحہ نہیں بھولی۔ بے نظیر کو یہ کیا کیا نہیں کہتے رہے، سب کو معلوم ہے۔پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ 2017ء سے ن لیگ اور پی ٹی آئی کا فارن فنڈنگ کے حوالے سے کیس چل رہا ہے۔ سپریم کورٹ کا فیصلہ ہے کہ تمام جماعتوں کی سکروٹنی شفافیت سے ہو۔ سکروٹنی کمیٹی کے بے شمار اجلاس ہو چکے ہیں لیکن ن لیگ اور پیپلز پارٹی نے کوئی ریکارڈ جمع نہیں کرایا نہ ہی پارٹی فنڈنگ کا ابھی تک بتایا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.