حنا پرویز بٹ کا تہلکہ خیز دعویٰ

لاہور (ویب ڈیسک) نامور خاتون سیاستدان حنا پرویز بٹ اپنے ایک کالم میں لکھتی ہیں ۔۔۔۔۔۔یہ بھی پہلی بار ہوا ہےکہ بچت کے ڈونگرے برسانے والے کے وزیر اعظم ہائوس میں اتنی بچت کی گئی ہے کہ اخراجات میں بھی 18کروڑ 40لاکھ کا اضافہ کرنا پڑا ہے۔ شوکت ترین کی باتوں میں کھلا

تضاد دکھائی دیتا ہے، 47فیصد خسارے کا بجٹ پیش کرنے کے بعد دعویٰ کیا نئے ٹیکس نہیں لگائیں گے لیکن 1230ارب سے زائد اضافی ریونیو ضرور جمع کرلیں گے، یعنی عوام سمجھ جائیں اور تیاری پکڑ لیں کہ منی بجٹ آئیں گے اور 610ارب روپے جمع کرنے کے لئے حکومت عوام پرپٹرول بم چلائے گی، شوکت ترین کی کس بات کا یقین کریں۔ ایک دن پہلے فرمایا موبائل کالز، انٹرنیٹ ڈیٹا اور ایس ایم ایس پر ٹیکس لگائیں گے، 24 گھنٹوں کے اندر اندرمدعا کابینہ پر ڈال کر اعلان واپس لے لیا، حقیقت تو یہ ہے کہ انٹرنیٹ پر ٹیکس ان کی دست اندازی سے بالاتر ہے۔ بجٹ ہمیشہ مخصوص ویژن کے تحت مرتب ہوتے ہیں،نواز شریف حکومت کی پالیسیوں کا تسلسل برقراررکھا جاتا تو ملک 7فیصد گروتھ تک تو ضرور پہنچ جاتا اور محصولات کے سابقہ ریکارڈ بھی ٹوٹ جاتے، عوام نے دیکھ لیا ہے کہ ایسا بجٹ پیش کرنے والوں نے عین بجٹ کے روز جہانگیر ترین کو این آر او دے دیا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.