نواز شریف واپس آنا چاہتے ہیں اور نہ ہی برطانوی حکومت انہیں واپس بھیجنا چاہتی ہے ۔۔۔۔۔۔

لاہور (ویب ڈیسک) )سینئر تجزیہ کار ہارون الرشید نے کہا ہے کہ 29جولائی کو جوجلسہ ہورہا ہے ، جے یو آئی کے کارکن کہہ رہے ہیں کہ اس کو وزیر اعلیٰ ہائوس لے جایا جائے یعنی سندھ حکومت کیخلاف اس کو احتجاج میں بدل دیا جائے کیونکہ کرائم بہت بڑھ گیا ہے ،

بجلی کی لوڈشیڈنگ بھی بڑھنے کا امکان ہے ، پنجاب میں افسر شاہی کے بڑے پیمانے پر تبادلے ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 9ڈپٹی کمشنر،3کمشنر ،7سیکرٹری ،5ڈی پی او، فیصل آباد کاسی پی او،2آر پی او بدلنا چاہتے ہیں۔3کمشنر فیصل آباد، سرگودھا اور ڈی جی خان کی تبدیلی کا امکان ہے ،لاہور، ننکانہ ، فیصل آباد، ساہیوال،جہلم، گوجرانوالہ ،چنیوٹ، اوکاڑہ،حافظ آباد کے ڈپٹی کمشنر کے تبادلے ہورہے ہیں ،سیکرٹری سپیشلائز ہیلتھ نوید اعوان ، سیکرٹری سروسز ، سیکرٹری کوآپریٹو اور سیکرٹری خوراک کی تبدیلی کا بھی امکان ہے ، نواز شریف نہ تو واپس آنا چاہتے ہیں اور نہ ہی برطانوی حکومت ان کو بھیجنا چاہتی ہے ،25ارب روپے کی منی لانڈرنگ ہے اور شہباز شریف اور ان کے خاندان کے لوگوں کیخلاف ثبوت موجو د ہیں،باپ کہتا ہے اس سے پوچھو، بیٹا کہتا ہے کہ اس سے پوچھو ۔جہانگیر ترین بارے سوال پر انہوں نے کہا کہ روز افواہ اڑتی ہے کہ اسے گرفتار کرلیا جائے گا،اسے کس چیز پر گرفتار کرینگے ،مرکزمیں بجٹ منظور ہونا شروع ہوگیا ہے ،اسے گرفتار کرکے حاصل کیا ہوگا ، شکار پور، سکھر ، لاڑکانہ ،کندھ کوٹ، جیکب آباد اور گھوٹکی میں ہر طرف لٹیروں کا راج ہے ،وڈیرے ، پیپلز پارٹی کے رہنما ان کی سرپرستی کرتے ہیں ۔سربراہ قومی عوامی تحریک ایاز لطیف پلیجو نے کہا ہے کہ ملک میں میں جتنے بھی مسئلے ہیں وہ بات چیت سے حل ہوسکتے ہیں ،بلڈرز کو پورا حق حاصل ہے کہ وہ اپنی کمرشل ایکٹویٹی جاری رکھیں مگر جب پانچ ایکڑ زمین کے ساتھ 200ایکڑ پر قبضے کی کوشش ہوگی تو پھر ظاہر ہے جو نسل در نسل لوگ زمین کے مالک ہیں وہ اپنی آواز بلند کرینگے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.