25 جولائی کو کس جماعت کے جیتنے کے امکانات زیادہ ہیں ؟

لاہور (وییب ڈیسک) نامور کالم نگار عمران یعقوب خان اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔پانچ برس قبل جولائی ہی میں منعقد ہونے والے آزاد کشمیر کے انتخابات میں مسلم لیگ (ن) نے اس وقت کی 49 نشستوں میں سے 31 نشستوں پر کامیابی حاصل کرکے دو تہائی اکثریت کے ساتھ حکومت بنائی تھی۔

اب کی بار آزاد کشمیر اسمبلی کی نشستوں کی تعداد 53 ہے جس میں خواتین کے لیے 5، ٹیکنوکریٹ، علما مشائخ اور بیرونِ ملک کشمیریوں کے لیے ایک ایک نشست مخصوص ہے۔45 براہ راست نشستوں میں سے 33 جموں و کشمیر کے علاقے میں ہیں، جہاں 28 لاکھ 17 ہزار سے زائد ووٹرز رجسٹرڈ ہیں جن میں 12 لاکھ 97 ہزار خواتین ہیں، جبکہ 12 نشستیں پاکستان کے مختلف حصوں کی ہیں، جس کے 4 لاکھ 30 ہزار 456 رجسٹرڈ ووٹرز ہیں، جن میں ایک لاکھ 70 ہزار 931 خواتین ہیں۔ پاکستان میں پائی جانے والی ان 12 نشستوں پر سب سے بڑا اعتراض شفافیت کا ہی ہوتا ہے جبکہ نون لیگ آزاد کشمیر کے اندر دھاندلی کا عندیہ بھی دے رہی ہے۔ ماضی میں آزاد کشمیر کے انتخابات اور ان کے نتائج کا جائزہ لیں تو یہی بات سامنے آتی ہے کہ ان انتخابات میں عموماً وہی جماعت حکومت بناتی ہے جسے اسلام آباد کی اشیرباد حاصل ہو، وفاق پاکستان میں برسراقتدار جماعت ہی مظفر آباد میں اپنی حکومت قائم کرتی ہے۔ اس کا ایک مظہر ہم گلگت بلتستان میں بھی دیکھ چکے ہیں کہ اپوزیشن کی بھرپور مہم کے باوجود میدان پی ٹی آئی نے ہی میدان جیتا ۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ تاریخ اپنے آپ کو دہراتی ہے یا 25 جولائی کے نتائج نئی تاریخ بناتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.