سپریم کورٹ نے سینئر قانون دان لطیف کھوسہ کو مشکل میں ڈال دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک)عدالت عظمیٰ نے ایم کیو ایم کے بانی کے خلاف منی لانڈرنگ کیس میں شریک ملزم سابق سینیٹر احمد علی کا مقدمہ اسلام آباد منتقل کرنے کے معاملے میں وفاقی حکومت سے جامع جواب طلب کرلیا۔ سماعت کے دوران تین رکنی بنچ کے سربراہ جسٹس عمر عطا بندیال اور احمد علی کے

وکیل سردار لطیف کھوسہ کے درمیان لاہور بار میں عدلیہ سے متعلق تقاریر پر مکالمہ بھی ہوا۔جسٹس عمر عطا بندیال نے لطیف کھوسہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ ایک منجھے ہوئے اور سنیئر وکیل ہیں اورعدلیہ کا وقار بار کے کنڈکٹ سے جھلکتا ہے لیکن آپ کی موجودگی میں عدلیہ کے خلاف باتیں کی گئیں، عدلیہ کی عزت بار سے ہوتی ہے ۔ لطیف کھوسہ نے کہا کہ بنچ اور بار کی عزت ایک دوسرے پر منحصر ہے ۔واضح رہے لطیف کھوسہ سپریم کورٹ بار ایسو سی ایشن کے آئندہ الیکشن میں حامد خان گروپ کے مشترکہ امیدوار ہیں اور انتخابی مہم کے سلسلے میں لاہور بار میں ایک تقریب کے دوران حامد خان کی تقریر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی جس میں سپریم کورٹ تقرریوں میں ججوں کی سنیارٹی نظر انداز کرنے اور مبینہ طو رپر پسندیدہ افراد کو جج لگانے پر سخت تنقید کی گئی تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.