وزیراعظم عمران خان نے کشمیر میں ریفرنڈم کرانے کا اشارہ دے دیا

مظفر آباد (ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے آزاد کشمیر میں دو ریفرنڈم کرانے کا اشارہ دے دیا ہے وزیراعظم پاکستان نے کہا ہے کہ پہلا ریفرنڈم اقوام متحدہ کے تحت ہوگا جس میں کشمیری عوام پاکستان یا بھارت کے ساتھ رہنے کا فیصلہ کریں گے جبکہ ہماری حکومت میں ہونے والے دوسرے

ریفرنڈم میں وہ پاکستان کے ساتھ الحاق یا آزاد ریاست کے طور پر رہنے کا چناؤ کریں گے۔ آزاد کشمیر کو صوبہ بنانے کی بات کہاں سے آئی مجھے علم نہیں، مقبوضہ کشمیر کے عوام حوصلہ نہ ہاریں، صبر کرلیں حق ملکر رہے گا، آزاد کشمیر میں حکومت اور الیکشن کمیشن ن لیگ کا ہے ہم کیسے دھاندلی کرسکتے ہیں، انتخاب ہارنے کے بعد یہ دھاندلی کا رونا روئیں گے، دو پرانی جماعتوں کے لوگوں نے عوام کی زندگی بہتر بنانے کے لیے کچھ نہیں کیا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے آزاد کشمیر کے علاقے تراڑ کھل میں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کشمیر کے ہر خاندان کے ایک فرد کو بلاسود قرضہ دینے کا بھی اعلان کیا۔ خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے مزید کہا کہ کشمیریوں نے اپنی آزادی کیلئے بے حد قربانیاں دیں اور کشمیر کے لوگ بار بار اپنی آزادی کے لیے کھڑے ہوئے ، پورا یقین ہے کہ کشمیریوں کی قربانیاں ضائع نہیں ہوں گی، کہا جارہا ہے کہ میں آزاد کشمیر کو صوبہ بنانا چاہتا ہوں یہ بات کہاں سے آئی اس کا علم نہیں۔اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں ریفرنڈم ہوگا اور کشمیری فیصلہ کریں گے کہ انہوں نے کس کے ساتھ رہنا ہے، کشمیری اپنا فیصلہ خود کریں گے کہ وہ بھارت کے ساتھ نہیں بلکہ پاکستان کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں۔عمران خان نے کہا کہ اس کے بعد میری حکومت ایک اور ریفرنڈم کروائے گی کہ کشمیری پاکستان کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں یا آزاد، ابھی سے الیکشن میں دھاندلی کا شور مچایا جارہا ہے، ن لیگ نے آج تک کوئی کام ایمانداری سے نہیں کیا، آزاد کشمیر میں آپ کی حکومت ہے، عملہ آپ کا ہے، الیکشن کمیشن آپ کا اور آپ کی پسند کا ہے، تو دھاندلی ہم کیسے کریں گے، پورا یقین ہے الیکشن ہارنے کے بعد ن لیگ دھاندلی کا رونا روئے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.