پرویز مشرف کے دور میں جنرل حمید گل مرحوم کے ساتھ کیا سلوک کیا گیا تھا ؟

لاہور (ویب ڈیسک) نامور پاکستانی شخصیت جنرل (ر) حمید گل مرحوم کے صاحبزادے محمد عبداللہ گل اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔بھارتی دارالحکومت دہلی میں موجود صحافی سوشانت سنگھ نے اپنے تجزیے میں لکھا تھا کہ حمید گل نے اپنے دور میں خالصتان تحریک کو اس مہارت سے اٹھایا تھا کہ بھارتی حکومت

کی چیخیں نکل گئیں ۔بھارتی صحافی گوتم شرما لکھتا ہے کہ حمیدگل انتہائی نڈر آدمی تھے جنہوں نے بھارت کے ساتھ ساتھ امریکا کی مخالفت بھی مول لی لیکن اپنے موقف سے پیچھے نہیں ہٹے ۔ بھارتی انٹیلی جنس اور افواج کی پلاننگ کو جس قدر جنرل حمید گل نے نقصان پہنچایا اتنا نقصان کسی اور نے نہیں پہنچایا ۔جنرل حمید گل کاکشمیر کے بارے میں بھی واضح موقف تھا کہ” کشمیر بنے گا پاکستان ‘‘نہیں بلکہ ”کشمیر پاکستان ہے‘‘ اور کشمیر کے بغیر پاکستان نامکمل ہے ۔ آپ نے ہمیشہ کشمیریوں کی وکالت کی اور کشمیری آپ کو مسیحا مانتے تھے اور اب بھی مانتے ہیں۔جنرل حمید گل کی سربراہی میں پاکستانی تاریخ کی سب سے بڑی مشقوں” ضرب مومن‘‘ کا آغاز ہوا جس کی کامیابی کا سہرا بھی آپ ہی کے سر جاتا ہے۔ وہ زندگی کی آخری سانس تک نظریہ پاکستان کے موقف پر قائم رہے ۔ اسرائیل کے حوالے سے بھی ان کی پالیسی اور موقف بڑا واضح اور دوٹوک تھا ۔جنرل مشرف نے نائن الیون کے بعد امریکہ کے سامنے گھٹنے ٹیکے تو حمید گل جیسے بہادرسے یہ برداشت نہ ہوا ۔ انہیں جنرل مشرف کی پالیسیوں کے خلاف احتجاج کرنے پر قید میں ڈال دیا گیا ۔ ہمارے خاندان کا رابطہ منقطع کر دیا گیا ‘ہمارے گھر کو ہی قید خانہ بنا دیا گیا تھا ۔ جنرل صاحب نے ملک و قوم کی خاطر سلاخوں کے پیچھے جانا بھی قبول کر لیا لیکن کسی کے سامنے جھکے نہیں ۔جنرل حمید گل ہمیشہ یہ الفاظ ببانگ دہل کہا کرتے تھے کہ ایک مومن کے لیے سپر پاور صرف اور صرف اللہ تعالیٰ کی ذات ہے اور میں اللہ کے سوا کسی کو سپرپاور نہیں مانتا۔ انہوں نے اپنے قول و فعل سے یہ ثابت بھی کیا۔اسلام اور پاکستان سے محبت ان کا وہ اثاثہ تھا جسے وہ کسی صورت گنوانے کیلئے تیار نہ تھے اور فوج سے ریٹائرڈ ہونے کے باوجود برملا اس امر کا اظہار کرتے تھے کہ انہوں نے حلف پاکستان کی حفاظت کا اٹھا رکھا ہے نہ کہ نوکری کا ‘ایک فوجی خواہ وہ حاضر سروس ہو یاریٹائرڈ ملک وقوم کی حفاظت کیلئے سربکف رہتا ہے ۔وہ زندگی کی آخری سانس تک نظریہ ٔپاکستان کے موقف پر قائم رہے ۔جنرل حمید گل کانام آج بھی دشمنوں کے دلوں میں ہیبت اور لرزہ طاری کردیتا ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.