یہ پیشگوئی کس نامور پاکستان شخصیت نے برسوں قبل کی تھی ؟

لاہور (ویب ڈیسک) نامور کالم نگار مظہر برلاس اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔افغانستان میں ریت کی دیوارثابت ہونے والی افغان فوج کی طاقت پر سب سے زیادہ امریکی پریشان ہیں انہیں یہ دکھ ہے کہ انہوں نے 83ارب ڈالر ز لگا کر جس فوج کی تربیت کی وہ تو بالکل بے بس نظر آئی۔

دوسری پریشانی انڈیا کو ہے پندرہ اگست بھارت کا یوم آزادی ہے لیکن اس روز بھارتی اپنا جشن بھول کر کابل پر سوگوار نظر آئے۔ کابل نے انہیں کسی قابل نہیں چھوڑا سرمایہ ڈوب گیا ، تعلقات پر پانی پھر گیا، درجنوں قونصل خانے ویران ہو گئے بھارتی یوم آزادی، یوم سوگ بن کر رہ گیا۔اشرف غنی بھی اپنی طرز کا شوکت عزیز ثابت ہوا، کولمبیا یونیورسٹی نیویارک سے پڑھنے والا اشرف غنی خود کو معیشت کا ماہر تصور کرتا تھا، وہ حامد کرزئی کے دور میں مضبوط ترین وزیر خزانہ تھا پھر اس نے صدر بننے کے لئے افغانیوں کو چکر دیا اب اس نے عبدﷲ عبدﷲ سمیت پورے افغانستان کو دھوکہ دیا، امریکہ اور مغربی ممالک کی خواہشوں پر پانی پھیر کر اشرف غنی بھاگ گیا، 72سالہ بوڑھا موت سے پہلے بھارت میں صف ماتم بچھا گیایہ وہی بزدل شخص ہے جو چند روز پہلے پاکستان سے متعلق غلیظ گفتگو کر رہا تھا مگر اب لعنتیں سمیٹ کر رفو چکر ہو گیا ہے۔ چین نے موجودہ قابضین کے ساتھ دوستانہ مراسم کی خواہش کا اظہار کیا ہے، پاکستان بھی ایک پرامن افغانستان کا خواہشمند ہے اسی طرح دیگر ہمسایہ ممالک کی بھی یہی آرزو ہے اب یہ ان پر منحصر ہے کہ وہ کیا چاہتے ہیں۔ ویسے اس سارے کھیل میں جنرل حمیدگل کا ایک جملہ بہت یاد آ رہا ہے کہ ’’جب تاریخ رقم ہو گی تو کہا جائے گا کہ آئی ایس آئی نے امریکہ کی مدد سے سوویت یونین کو افغانستان میں شکست دے دی پھر ایک اور جملہ ہو گا کہ آئی ایس آئی نے امریکہ کی مدد سے امریکہ کو شکست دے دی ‘‘۔اچھی امیدوں کے ساتھ اقبال کا یہ شعر پڑھئے۔یہ جبر وقہر نہیں ہے، یہ عشق و مستی ہے۔۔۔کہ جبر وقہر سے ممکن نہیں جہاں بانی

Leave a Reply

Your email address will not be published.