وہ ایک غلطی جس نے اشرف غنی کو افغانیوں کے لیے ناپسندیدہ ترین شخصیت بنا دیا ۔۔۔۔

لاہور (ویب ڈیسک)مضمون نگار زاہد نور مرزا اپنی ایک تحریر میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔ تجزیہ کار مصنف احمد رشید نے لکھا ہےکہ ’’اشرف غنی نے کبھی بھی کسی کو بہت قریب آنے کی اجازت نہیں دی ، خود کو دور رکھنا‘‘۔’’بدقسمتی سے ان کے برے مزاج اور ساتھی افغانوں اور مغربی لوگوں کے ساتھ تکبر

کا مظاہرہ بہت زیادہ تھا جس نے انہیں جلد ہی ایک نفرت انگیز شخصیت بنا دیا۔‘‘اشرف غنی نے رولا سے شادی کی،جن سے وہ لبنان کی امریکن یونیورسٹی میں اپنی پہلی ڈگری کی تعلیم کے دوران ملے تھے اوران کے دو بچے ہیں۔2009 کے انتخابات میں ناقص کارکردگی دکھانے کے بعد ، غنی نے 2014 میں بہت سے افغانوں کو چونکا دیا اور ایک ازبک جنرل عبدالرشید دوستم کو منتخب کیا جو کہ کئی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا ملزم ہے۔صدر بننے سے پہلے غنی نےغیرملکی خبررساںادارے کو ایک انٹرویو میں کہا کہ ’میں الگ تھلگ زندگی نہیں گزاروں گا لیکن آخر میں انہوں نے بالکل ایسا ہی کیا، صرف چند مٹھی بھر قابل اعتماد ساتھیوں کے ساتھ صدارتی محل تک محدود رہے۔اپنے فیس بک ویڈیو پیغام میں ، عبداللہ عبداللہ ،جو کہ غنی کے دیرینہ سیاسی حریف رہے ہیں نےکہاکہ غنی کے ساتھ سخت معاملہ ہوگا وہ خدا کو جوابدہ ہیں اور لوگ ان کا فیصلہ کریں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.